اکتوبر 18, 2009

نازک بدن

Posted in انتخاب, اشعار tagged , بوقت: 9:36 صبح از Bilal

جسے دیکھتے ہی خماری لگے

جسے عمر ساری ہماری لگے

اجالا سا ہے اس کے چاروں طرف

وہ نازک بدن پاؤں بھاری لگے

وہ سسرال سے آئی ہے میکے

اسے جتنا دیکھوں پیاری لگے

وضاحت:۔

باپ کے احساسات اپنی بیٹی کے بارے میں جو پاؤں بھاری ہونے پر سسرال سے میکے آئی ہے اور اس پر ایک نئی چمک دمک ہے۔

[ شاعر کا مدعا سمجھنے کیلئے اب اشعار دوبارہ پڑھیے (; ]

ماخذ : عرب نیوز

(اشعار و نثر)

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: